Anti Ageing

میلاسما (چہرے پہ کالے دھبے) سے نجات حاصل کرنےکےبارے میں مکمل معلومات

Natural-treatment-for-melasma-or-cloth (1)

میلاسما (کالے دھبے) سے نجات حاصل کرنےکے قدرتی طریقے Melasma

 

جلد پر نمودار ہونے والے ایسے داغ اور کالے دھبے جو زیادہ تر گوری رنگت والی خواتین کے چہرے پر ابھر آتے ہیں اور انکی حسن کو گرہن لگا دیتے ہیں اس تحریر میں آپ اس بد نما بیماری کی علامات وجوہات اور ان سے بچاو کے آسان ٹوٹکے جان سکیں گے۔

میلاسما کی علامات 

اکثر خواتین کی جلد پرپائے جانے والے بد نما کالے داغوں اور چھائیوں کی وجہ انکے جسم میں موجو د جنسی ہارمون ایسٹرون اور پروجسٹرون میں تبدیلی ہے۔ یہ ہی وجہ ہے کہ اس بیماری کا شکار اکثر حاملہ خواتین ہوتیں ہیں ۔سورج کی مضر شعاعوں میں گھومنے کے علاوہ گرم علاقوں میں رہنے والی خواتین بھی اس مرض میں مبتلا نظر آتی ہیں خاص طور پر ان خواتین کے چہرے پر کالے، بد نمادھبے اُبھر آتے ہیں جو سن یا کے دوران حمل روکنے کی گولیوں کا استعمال کرتی ہیں ۔ کاسمیٹک، ادویات سے ہونے والی الرجی ، غدود درقیہ کی خرابی سمیت غصہ اور پریشانی جلد پر ان بد نما داغوں کا باعث بن سکتی ہے یہ بیمار ی اکثرموروثی بھی ہوتی ہے۔ 

میلاسما کی علامات میں چہرے کی رنگت تبدیل ہوجانے کے ساتھ جلد کی ظاہری ساخت میں بھی تبدیلی رونما ہوتی ہے متاثرہ حصوں کے رنگت سیاہ پڑ نے لگتی ہے ۔اس بیماری میں جلد کی رنگت سیاہی مائل ہوجاتی ہے ۔یہ سیاہ دھبے چہرے کی دونوں جانب ماتھے ، رخسار ، ناک اور ہونٹ کے اوپری حصے پر نمودار ہوتے ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق ان جھائیوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے ایسی کریموں کا استعمال بہتر ہو سکتا ہے جن میں اذیلیک ایسڈ ، کوجیک ایسڈ ،ہائیڈروکونون اورٹریٹنین کے ساتھ ساتھ اسٹیرایڈ کریم بھی شامل ہو ۔اگر بیماری خطرناک حد تک بڑھ جائے تو اس کا علاج لیزر شعاعوں کے ذریعے بھی کیا جاتا ہے ۔ مکمل علاج کے بعد اس بیماری کے آثار کچھ ماہ میں ہی ختم ہونے لگتے ہیں ۔مسائل کا آغاز اس وقت ہوتا ہے جب خاتون دوبارہ حاملہ ہوں اور انکے چہرے پر چھائیاں پھر نمودار ہو جائیں اس صورتحال میں خواتین کو لیزر شعاعوں کا علاج کرنے کے بجائے انتظار کرنا چاہیے اور اس بعد کا تجزیہ کرنا چاہیے کہ یہ بیماری کہیں ہارمون کی تبدیلی کا نتیجہ تو نہیں ،ڈاکٹرز کے مطابق ان بد نما داغ دھبوں سے بچائو کا ذریعہ صحت کا خیال رکھنا ہے اس طرح چھائیوں سے نجات حاصل کی جا سکتی ہے۔

جھائیاں ختم کرنے کے گھریلو ٹوٹکے 

گھر میں موجود چند قدرتی اشیاء کی مدد سے آپ اس بیماری سے نجات حاصل کر سکتے ہیں ۔ خواتین رجونورتی کی وجہ سے پیدائش روکنے والی گولیاں استعمال کریں یا کسی بھی قسم کی دوائی انہیں یہ معلوم ہونا چاہیے کے میلنین ہارمون کی جسم میں زیادتی میلاسما کی بنیادی وجہ ہے 

اب خواتین کے لیے خوشخبری یہ ہے کے وہ گھر میں موجود اشیاء سے ہی اب اپنا علاج کرسکتی ہیں ۔

کیلے کی مدد سے چھائیاں ختم کرنے کا آسان ٹوٹکا

کیلے کو کچل کر متاثرہ حصوں پر پندرہ منٹ کے لیے لگا کر چھوڑ دیں پھر چہرے کو گرم پانی سے دھو لیں ،اس عمل کو ہفتے میں چار بار د ہرانا ہے۔

بینگن کی مدد سے چھائیاں ختم کرنے کا آسان ٹوٹکا 

بینگن کو ٹکڑوں میں کاٹ کر اس کا گودہ ہٹا دیں اب اس مرہم کو متاثرہ حصے پر لگائیں اور پندرہ منٹ کے لیے چھوڑ دیں۔ اسکے بعد ٹھنڈے پانی سے منہ دھو لیں۔ اس عمل کو ہفتے میں تین بار دہرانے سے آپ چھائیوں سے نجات حاصل کر سکتے ہیں۔ 

سیاہ بلسان کی مدد سے چھائیاں ختم کرنے کا ٹوٹکا 

چار سے پانچ قطرے سیاہ بلسان کو انڈے کی سفیدی میں اچھی طرح ملا کر صبح اور شام استعمال کرنے سے رنگت صاٖ ف ہوجائے گی اور چھائیاں بھی غائب ہوجائیں گی۔ 

ہاڈروجن پر آکسائڈ کی مدد سے چھائیاں ختم کرنے کا آسان ٹوٹکا 

رات میں سونے سے پہلے اپنی جلد پر ہاڈروجن پر پر آکسائڈ لگانے سے میلاسما سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے۔ 

چہرے کے داغ دھبوں سے نجات حاصل کرنے کا ماسک

دو کھانے کے چمچے سوکھا دودھ، چار کھانے کے چمچے شہد اور دو کھانے کے چمچے لیموں کا رس ملا کر پیسٹ بنا لیں ۔اس ماسک کو اپنے چہرے پر بیس منٹ کے لیے لگائیں ،چہرہ دھونے کے بعد دہی کو چہرے پر لگائیں اور دس منٹ تک لگا رہنے دیں اس سے آپ کی رنگت نکھرنے کے ساتھ چہرہ صاف ہوجائے گا۔ 

پیاز اور سرکہ کی مدد سے چھائیاں ختم کرنے کا ٹوٹکا 

ایک درمیانہ پیاز پیس کر اس میں تھوڑا سا سرکہ شامل کریں ۔اس مکسچر کو اپنے چہرے پر پندرہ منٹ کے لیے لگا کر چھوڑ دیں ۔ اگر جلن ہو تو فورا دھو لیں۔

میلاسما کے بارے میں مزید آگاہی 

اکثر یہ بیماری خاندانی یا موروثی ہوتی ہے اور نسل در نسل چلتی آرہی ہوتی ہے ایسی صورت میں آپ کو مزید احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے،سورج سے زیادہ سے زیادہ بچنا چاہیے جبکہ سن بلاک کریم کا باقاعدہ اور روز مرہ کی زندگی میں بھی استعمال رکھنا چاہیے۔کوشش کریں کے حمل روکنے کے لیے لی جانے والی گولیاں یا کوئی بھی ہارمونل تھراپی استعمال نہ کریں۔ اگر میلاسما کی شدت بہت زیادہ ہے تو کسی بھی طرح کے علاج کو اختیار کرنے میں محتاط رہیں چاہے وہ کوئی گھریلو ٹوٹکا ہی کیوں نہ ہو اسک ا ر یکشن بھی ہوسکتا ہے اور صورتحال مزید خراب ہوسکتی ہے۔

جلد کی یہ حساس بیماری زیادہ تر پچیس سے پچاس سالہ خواتین میں پائی جاتی ہے اسکو ختم کرنے کا باقاعدہ علاج تو نہیں لیکن مختلف طریقوں سے دھبوں کا رنگ ہلکا کیا جا سکتا ہے۔

دوبارہ حمل کی صورت میں یا دھوپ میں زیادہ تر گھومنے کے باعث یہ بیماری ایک بار پھر اُبھر کر سامنے آسکتی ہے۔ یہ بیماری خواتین کی خوبصورتی کو نقصان پہنچاتی ہے اس کے علاوہ یہ اپنے شکار کو کوئی دوسرا نقصان نہیں پہنچاتی ۔

کئی مرتبہ تو یہ بیماری بنا علاج کے ہی ختم ہوجاتی ہے مثال کے طور پر بچے کو جنم دینے کے بعد اکثر خواتین کا چہرہ پہلے کی طرح خوبصورت ہو جاتا ہے ۔ اس بیماری کو ختم کرنے کے لیے سب سے اچھا ذریعہ یہ ہے کہ مریض کسی اچھے ماہر امراض جلد سے رابطہ کرے آج کل اس بیماری سے بچاو کے جدید طریقے آگئے ہیں جسے میکروڈرمابریشن جس میں کسی کیمیائی مادہ استعمال کیے بنا ہی خراب جلد کو چہرے سے الگ کر دیا جاتا ہے اسکے علاوہ لیزر شعاعوں اور کیمیائی مادہ کے ذریعے بھی چند ہفتوں میں اس مرض سے چھٹکارا حاصل کیا جا سکتا ہے۔

اوپر بیان کئے گئے گھریلو ٹوٹکوں کی مدد سے بھی آپ کی جلد پہلے کی طرح خوبصورت ہو سکتی ہے ۔ یہ ٹوٹکے آزمائیں اور ہمیں اپنی رائے سے ضرور آگاہ کریں۔

Categories: Anti Ageing, Face Care

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s